میرا کراچینمایاں

کراچی کے علاقے گلبرگ میں شیرکابچے پر حملہ

کراچی میں بچے پر شیر کے حملے کے معاملے کی اندرونی کہانی سامنے آگئی۔

پولیس کے مطابق شیرکا مالک اسامہ شیروں کی خرید و فروخت کا کام کرتا ہے اور  اسامہ کا بھائی سعد شیر کو لے کر اپنے دوست حمید کے گھر گیا تھا جہاں حمید نے شیر کے ساتھ تصاویر لینے کے لیے سعد کو بلایا تھا۔

پولیس کا کہناہےکہ گھر کے باہر حمید اور اس کا بیٹا عبدالنافع موجود تھے کہ اس دوران شیر نے حمید کے 10 سال کے بیٹے عبدالنافع پر حملہ کیا، حملے کے بعد مشکل سے شیر کو قابو کیا گیا اور بچے کو چھڑایا گیا تاہم شیر کے حملے میں بچے کے پیٹ اور ٹانگ پر شدید چوٹیں آئی ہیں اور شیر کے دانتوں نے بچے کے جسم کو نقصان پہنچایا ہے البتہ بچے کی حالت خطرے سے باہر ہے۔

پولیس کے مطابق حملے سے قبل شیر کے ساتھ لی گئی تصاویر بھی سامنے آئی ہیں جب کہ 14 مئی کی سی سی ٹی وی گزشتہ روز منظر عام پر آئی تو مقدمہ درج کرلیا گیا جس کے بعد سعد اور سکیورٹی گارڈ روشن کو گرفتار کرلیا ہے۔

پولیس کا بتانا ہے کہ شیر کا مالک اسامہ شیر کو لے کر نامعلوم مقام پر فرار ہوچکا ہے جسے جلد گرفتار کرلیا جائے گا

Tags
Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
Close
Close