میرا کراچینمایاں

اس وقت صوبے میں تشخیص کی شرح 8.8 فیصد ہے،وزیراعلیٰ سندھ

 وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ اس وقت صوبے میں تشخیص کی شرح 8.8 فیصد ہے۔

وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی صدارت میں کورونا وائرس صوبائی ٹاسک فورس کا اجلاس ہوا، جس میں وزیراعلیٰ نے  بتایا کہ سندھ میں کل سب سے زیادہ 24299 نمونوں کی جانچ کی گئی، جس کے نتیجے میں 2136 نئے کیسز رپورٹ ہوئے، اس وقت صوبے میں تشخیص کی شرح 8.8 فیصد ہے۔

صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر عذرا پیچوہو نے اجلاس کو بتایا کہ 13 مئی یعنی عید پر 1232 کیسز تھے، 19 مئی کو 2076 کیسز اور 21 مئی کو 2136 کیسز تھے۔ جس پر وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ کیسز کی شرح عید کے بعد مسلسل بڑھ رہی ہے، 7 دنوں ( 15 مئی سے 21 مئی تک) میں کراچی میں 13.97 فیصد کیسز ہوئے۔

سیکریٹری صحت کاظم جتوئی نے بریفنگ میں بتایا کہ حیدرآباد میں 10.83 فیصد کیسز اور باقی سب اضلاع میں 5.40 فیصد کیسز رپورٹ ہوئے، ہفتہ وار رپورٹ کے حساب سے کراچی شرقی میں 15 فیصد کیسز ہیں، ضلع وسطی میں 13 فیصد، ملیر اور غربی میں 10 فیصد کیسز ہیں، حیدرآباد میں 11 فیصد اور سکھر میں 8 فیصد کیسز ہیں۔

بریفنگ میں بتایا گیا کہ گزشتہ 30 دنوں میں کورونا کے 213 مریض انتقال کرگئے، انتقال کرنے والوں میں 164 اسپتالوں میں وینٹیلیٹرز پر تھے، اور 42 مریض اسپتال میں وینٹیلیٹرز پر نہیں تھے جب کہ 26 مریضوں کا گھروں میں انتقال ہوا۔ سندھ کو اس وقت تک 10 لاکھ 7 ہزار سینوفارم، اور  47000 کیسینو ویکسین موصول ہوئی ہیں، 4 لاکھ 85 ہزار سینو ویک اور 1 لاکھ 7 ہزار 500  اسٹرازینیکا ویکسین موصول ہوئی ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ  سندھ حکومت کی جانب سے کورونا کے بڑھتے کیسز کے باعث لاک ڈاؤن میں مزید سختی کرنے کا امکان ہے،  گزشتہ اجلاس میں بھی ٹاسک فورس ممبران اور ماہرین نے مزید سخت فیصلے کرنے کا مشورہ دیا تھا

Tags
Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
Close
Close