ادھر اُدھر کینمایاں

ایواکیڈو کھانے سے انسانی آنتیں تندرست رہتی ہیں

یونیورسٹی آف اربانا شیمپین کے سائنس دانوں نے ایک طویل سروے سے انکشاف کیا ہے کہ اس پھل کو اپنی غذا کا حصہ بنانے کے بہت فوائد حاصل ہوسکتے ہیں۔ اس کی تحقیق جرنل آف نیوٹریشن کے اگست 2020ء کے شمارے میں شائع ہوئی ہے۔

اس تحقیق میں سیکڑوں افراد نے شرکت کی ہے جن کی عمریں 25 سے 45 سال کے درمیان تھیں۔ ان میں سے بعض افراد موٹاپے کی جانب راغب تھے اور ان کا وزن معمول سے زائد بڑھا ہوا تھا۔
تمام شرکا کو دو حصوں میں بانٹا گیا اور ایک گروہ کو 12 ہفتے تک مگرناشپتی کھلائی گئی جبکہ دوسرے کو ایواکیڈو نہیں دیا گیا۔ اس دوران تین ماہ تک تمام شرکا کے خون، فضلے اور پیشاب کے نمونے لے کر ان کا تجزیہ کیا گیا۔

اس سے دلچسپ انکشاف ہوا کہ جن خواتین و حضرات نے تین ماہ تک ایواکاڈو کھایا تھا ان کی آنتوں میں صحت بخش خردنامیے اور بیکٹیریا موجود تھے۔ انہوں نے اپنے فضلے میں چکنائی کی بڑی مقدار بھی خارج کی جو ظاہر کرتی ہے کہ یہ پھل بدن سے چکنائی خارج کرنے میں مدد کرتی ہے

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
Close
Close