میرا کراچینمایاں

تجارتی مراکز کی بندش کے فیصلے سے یومیہ اجرت کمانے والوں کو شدید پریشانی کا سامنا

سندھ حکومت کے تجارتی مراکز کی بندش کے فیصلے سے تاجروں اور یومیہ اجرت کمانے والوں کو شدید پریشانی کا سامنا ہے۔ کراچی تاجر اتحاد کے سربراہ عتیق میر نے کہا ہے کہ شہر کے بازاروں کی بندش سے تاجروں کو یومیہ 4 ارب روپے کا نقصان ہوگا۔

ملک میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد بڑھ کر 251 ہوگئی ہے اور سب سے زیادہ سندھ میں 181 مریض ہیں۔ حکومت سندھ نے 15 روز کے لیے تمام مارکیٹیں، ریسٹورنٹ اور شاپنگ مالز بند کرنے کا اعلان کیا ہے۔

ترجمان سندھ حکومت مرتضیٰ وہاب کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس تیزی سے پھیل رہا ہے، کمشنر کراچی کو دکانیں اور ریسٹورنٹس بند نہ کرنے والوں کے خلاف کارروائی کا حکم دیا ہے۔

مرتضیٰ وہاب نے کہا کہ دکانوں کی بندش کا اطلاق پرچون اور میڈیکل اسٹورز پر نہیں ہوگا، حکومتی فیصلے پر اب تک 100 فیصد عمل درآمد نہیں ہوا،آج بھی کچھ دکانیں اور ریسٹورنٹس کھلے دیکھے ہیں، کمشنر کراچی کو خلاف ورزی کرنے والے دکان داروں کے خلاف کارروائی کا کہا ہے

Tags
Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
Close
Close