قومینمایاں

مارچ میں ہونے والے امتحانات موخر ہوں گے، وفاقی وزیر تعلیم

اسلام آباد میں یکم جنوری بروز جمعہ کو پرائیوٹ اسکولز سپریم کونسل اور حکومت کے درمیان تعلیمی اداروں کو کھولنے سے متعلق اہم اجلاس ہوا۔
اجلاس میں وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود، پارلیمانی سیکریٹری وجیہ اکرام اور چیئرپرسن پیرا شریک ہوئے۔ اجلاس کے دیگر شرکا میں پرائیوٹ اسکول کے وفد میں افضل بابر، حافظ بشارت، ابرار خان اور ناصرمحمود شامل تھے۔
اجلاس سے قبل پرائیوٹ اسکول کے وفد کی میڈیا سے گفتگو میں کہنا تھا کہ حکومت ہماری مشکلات سمجھے اور ان کے حل کیلئے اقدامات کرے
اس موقع پر وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود کا کہنا تھا کہ مارچ میں ہونے والے امتحانات مؤخر ہونگے، جب کہ گرمیوں کی چھٹیاں اس سال کم ہونگی، تاہم اس کی حتمی منظوری این سی او سی کے اجلاس میں دی جائے گی۔
انہوں نے کہا کہ امتحانات مارچ کے بجائے مئی جون میں لئے جائیں گے، جب کہ تعلیمی سال اگست سے شروع کیا جائے گا۔ نجی تعلیمی اداروں کو پیکج دے رہے ہیں۔ نجی تعلیمی اداروں کی مشکلات کا ادراک ہے۔ کوئی بھی اہم فیصلہ مشاورت سے کیا جائے گا۔ وزارت صحت کی بریفنگ پر تعلیمی ادارے کھولنے کا فیصلہ ہوگا۔ وزارت صحت کی تجاویز کے بنا تعلیمی ادارے نہیں کھول سکتے۔
وزیر تعلیم کا مزید کہنا تھا کہ ہم نے بچوں، اساتذہ اور اسٹاف سب کی صحت کو دیکھنا ہے۔ مزید مشاورت 4 جنوری کے اجلاس میں ہوگی۔
نئے سال کے آغاز پر یکم جنوری 2021 کواین سی او سی کے مطابق 24گھنٹوں میں 2 ہزار463 افراد کرونا وائرس کا شکار ہوئے، جب کہ 24گھنٹوں کے دوران41 ہزار 39 افراد کے کرونا ٹیسٹ کيے گئے۔ این سی اوسی کے نئے اعداد و شمار کے مطابق ملک ميں کرونا کیسز کی تعداد 4 لاکھ 82 ہزار 178 ہوگئی ہے۔ کرونا سے مجموعی اموات کی تعداد 10ہزار 176ہوگئی ہے۔
رپورٹ کے مطابق ملک میں ایکٹو کیسز کی تعداد 34 ہزار 773 ہے،جب کہ صحت یاب ہونے والوں کی تعداد 4 لاکھ 37 ہزار 229 تک پہنچی ہے۔
واضح رہے کہ اس سے قبل پاکستان میں کرونا وائرس کی دوسری لہر اور بڑھنے کیسز پر گزشتہ سال 26 نومبر سے ملک بھر میں تعلیمی ادارے بند کرنے کا اعلان کیا گیا تھا۔ قبل ازیں گزشتہ سال 23 مارچ کی پہلی بندش کے بعد تعلیمی اداروں کو گزشتہ سال 15 دسمبر سے مرحلہ وار کھولا گیا تھا۔

Tags
Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
Close
Close