قومینمایاں

وفاقی ملازمین کو گھر سے کام کرنے کی ہدایت

وزیرِ اعظم عمران خان کی معاونِ خصوصی برائے اطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا کہنا ہے کہ 50سال یا زائد عمر کے وفاقی ملازمین کو گھر سے کام کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ پاکستان کے عوام کا تحفظ اور سلامتی ہماری اولین ترجیح ہے۔

ڈاکٹر فردوس عاشق نے بتایا ہے کہ 15 دنوں کے لیے حکومت نے تمام وفاقی دفاتر و ملازمین کے لیے احکامات جاری کر دیے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اس دوران اہم امور سر انجام دینے والا سٹاف اور افسران اپنی حاضری یقینی بنائیں گے، البتہ 50 سال یا زائد عمر کے ملازمین گھر سے کام کریں گے۔

فردوس عاشق اعوان نے بتایا کہ نزلہ، زکام، بخار یا کسی بھی بیماری میں مبتلا ملازمین گھر سے کام کریں ہے، دفاتر میں ڈے کیئر سینٹرز بند رہیں گے۔

انہوں نے کہا کہ وہ خواتین اسٹاف و ملازمین جو کم عمر یا نوزائیدہ بچوں کی مائیں ہیں انہیں گھر سے اپنے امور انجام دینے کی اجازت ہے۔

وزیرِ اعظم کی معاونِ خصوصی نے کہا کہ پبلک سروس ڈیلیوری کے تمام دفاتر بند رہیں گے، کورونا وائرس کے ممکنہ خدشات کے پیش نظر 15 دنوں کے لےی ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن، پراپرٹی دفاتر سمیت پارلرز اور بیوٹی سیلون بھی بند رہیں گے۔

ان کا مزید کہنا ہے کہ شاپنگ مال رات 10 بجے بند کر دیئے جائیں گے، تاہم عوام کی سہولت کے پیشِ نظر کھانے کے ریستوران، فوڈ آؤٹ لیٹ اور ٹیک اوے کی سہولتیں میسر رہیں گی۔

ڈاکٹر فردوس نے یہ بھی کہا کہ حکومتی فیصلے کے تحت نادرا، پاسپورٹ اینڈ امیگریشن، سی ڈی اے کے ون ونڈو سمیت دیگر تمام ایسے شعبہ جات جہاں لوگوں کا براہِ راست عمل دخل اور ڈیلنگ شامل ہے اسے بھی دو ہفتوں کےلیے بند کر دیا گیا ہے۔

Tags
Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
Close
Close