قومینمایاں

حکومت کی جانب سے کورونا پابندیوں میں نرمی لانے کا فیصلہ

حکومت نے کورونا وائرس کی ایس او پیز میں نرمی کا اعلان کردیا، یکم جولائی سے کاروباری اوقات 10 بجے تک ہوں گے، صرف ویکسینیٹڈ افراد کو ریسٹورنٹس میں کھانے اور سنیما جانے کی اجازت ہوگی، تعلیمی اداروں سے متعلق فیصلہ صوبائی حکومتیں کریں گی۔

وفاقی وزیر اسد عمر کی زیر صدارت این سی او سی کا اجلاس ہوا جس میں ملک بھر میں جاری کورونا وائرس کی صورتحال اور این پی آئیز کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔

اجلاس میں این سی او سی کی جانب سے پابندیوں میں نرمی لانے کا فیصلہ کیا گیا اور طے کیا گیا کہ اس کا اطلاق یکم جولائی سے 31 اگست تک ہوگا۔

اجلاس میں کاروباری مراکز کے اوقات کار رات 10 بجے تک کرنے کا فیصلہ کیا گیا، پیٹرول پمپس، میڈیکل اسٹورز سمیت ضروریات کے اہم کاروباروں کو چوبیس گھنٹے کھلنے کی اجازت ہوگی۔

ریسٹورنٹس کو آؤٹ ڈور ڈائننگ کی اجازت ہوگی تاہم ان ڈور پر 50 فیصد کی پابندی عائد ہوگی۔ فیصلوں کے مطابق صرف ویکسین لگوانے والے افراد ہی ان ڈور ڈائننگ کی سہولت حاصل کرسکیں گے، ہوٹلز اور ریسٹورنٹس انتظامیہ کی جانب سے ویکسی نیشن سرٹیفیکیٹس چیک کرنے کا لائحہ عمل بنایا جائے گا۔

اسی طرح شادی کی تقریب آؤٹ ڈور ہوگی جس میں 400 افراد تک شرکت کرسکیں گے، 200 تک ویکسینیٹڈ افراد ان ڈور شادی کی تقریب میں شریک ہوسکیں گے۔

این سی او سی کے مطابق ثقافتی، مذہبی اور دیگر اجتماعات پر پابندی برقرار رہے گی، مزارت کو ایس او پیز کے اطلاق کے ساتھ دوبارہ کھلنے کی اجازت ہوگی۔

این سی او سی نے لوگوں کو سستی تفریح فراہم کرنے کی غرض سے سنیما کھلنے کی اجازت دینے کا فیصلہ کیا۔ فیصلے کے مطابق رات ایک بجے تک صرف ویکسی نیشن شدہ افراد کے لیے سنیما کھولنے کی اجازت ہوگی۔

پبلک ٹرانسپورٹ کو 70 فیصد کی گنجائش کے ساتھ چلنے کی اجازت ہوگی، تفریحی مقامات، سوئمنگ پول کو 50 فیصد کی گنجائش کے ساتھ کھلنے کی اجازت ہوگی۔

تعلیمی اداروں سے متعلق این سی او سی کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ تعلیمی اداروں میں موسم گرما کی چھٹیوں کے حوالے سے فیصلوں کا اختیار صوبائی حکومت کے پاس ہوگا اور وہ ہی اس حوالے سے احکامات جاری کریں گی۔

Tags
Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
Close
Close