سیاسی باتیںنمایاں

کراچی کی نصف آبادی کو شمار کیے بغیر مردم شماری کی منظوری کراچی دشمنی ہے،حافظ نعیم الرحمن

امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ کراچی کی نصف آبادی کو شمار کیے بغیر مردم شماری کی منظوری کراچی دشمنی ہے۔انہوں نے وفاقی کابینہ میں 2017کی مردم شماری کی حتمی رپورٹ جس میں کراچی کی آبادی کو درست شمارنہیں کیا گیا ہے،پیش کیے جانے اور کابینہ کی جانب سے منظوری کی شدید مذمت کرتے ہوئے مردم شماری کی حتمی رپورٹ میں کراچی کی نصف آبادی کو شمار نہ کیا جانا اہل کراچی کے ساتھ سراسر ظلم و زیادتی اور نا انصافی ہے۔ ایم کیو ایم کی وفاقی کابینہ میں موجودگی کے باوجود مردم شماری کی حتمی رپورٹ کو منظور کر لیا گیا ہے۔ ایم کیو ایم نے صرف زبانی کلامی تحفظات کا اظہار کیا اور پی ٹی آئی نے بھی کراچی کے عوام کے ساتھ زیادتی اور انصافی کی ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ادارہ نور حق میں پبلک ایڈ کمیٹی کراچی کے ذمہ داران کے اعلیٰ سطحی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ پی ٹی آئی اور ایم کیو ایم دونوں نے کراچی کے عوام سے ووٹ لیے ہیں اور یہ پارٹیاں کراچی کے حقوق اور مسائل کے حوالے سے بہت دعوے اور باتیں کرتی ہیں لیکن اس کے باوجود کراچی کے عوام کے مفادات کے خلاف فیصلے ہو رہے ہیں اور کراچی کے حقوق کو غصب کیا جا رہا ہے۔ ایسی حکمرانی،اقتدار اور وزارتوں کا کیا حاصل جس کا کوئی فائدہ کراچی کے عوام کو نہ ہو۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ کراچی کی آبادی تین کروڑ سے زائد ہے اور ہمارا مطالبہ یہ ہے کہ کراچی کی آبادی کو درست شمار کیا جائے اور صاف و شفاف مردم شماری دوبارہ کرائی جائے۔ اسی صورت میں کراچی کے عوام کو ان کا جائز حق مل سکتا ہے اور اسی طرح وسائل کی درست تقسیم ممکن ہو سکتی ہے۔ جائز حقوق اور وسائل ملنے سے ہی تین کروڑ عوام کے بنیادی اور گھمبیر مسائل حل ہو سکتے ہیں۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ مردم شماری میں کراچی کی آبادی کو کم ظاہر کرنے سے ایک بار پھر مسائل حل نہ ہونے کا خدشہ لاحق ہے۔ ایک طرف نہ صرف پی ٹی آئی اور ایم کیو ایم نے کراچی کے عوام کو مایوس کیا ہے۔ دوسری طرف پیپلز پارٹی نے بھی کراچی کی آبادی کو درست شمار کرانے کے لیے اپنا کردار ادا نہیں کیا۔ ہم نے گورنر سندھ اور وزیر اعلیٰ سندھ سے ملاقاتیں کی تھیں اور دونوں کو اس اہم مسئلے کی جانب متوجہ کیا تھا مگر افسوس کہ کراچی کے عوام کو ان کا جائز حق نہیں دلا سکے۔

Tags
Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
Close
Close