ادھر اُدھر کینمایاں

لوڈ شیڈنگ کامسئلہ حل نہ ہوا تو احتجاج کا اعلان کریں گے،حافظ نعیم

کراچی: امیرجماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ بجلی کی لوڈ شیڈنگ کا معاملہ آئے روز بگڑتا جا رہا ہے، 3 دن میں یہ مسئلہ حل نہ ہوا تو احتجاج کا اعلان کریں گے جبکہ گورنر سندھ عمران اسماعیل کے لوڈ شیڈنگ ختم کرنے کے دعوے کہاں گئے؟؟۔

تفصیلات کے مطابق ادارہ نورِ حق میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے امیرجماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن کا کہنا تھا کہ 13 برس سے برسرِ اقتدار پاکستان پیپلز پارٹی اس مسئلے پر بولنے کو تیار نہیں، گورنر سندھ عمران اسماعیل کے لوڈ شیڈنگ ختم کرنے کے دعوے کہاں گئے؟۔

امیرجماعت اسلامی کراچی کا مزید کہنا تھا کہ  حکومت کی جانب سے شہریوں کو کوئی ریلیف نہیں دیا جا رہا، کے الیکٹرک نجکاری کے 16برس بعد صرف بجلی کی پیداوار میں 11فیصد اضافہ کرسکا۔

انہوں نے کہا کہ نیپرا کے الیکٹرک کو ڈھیل دیتا ہے، کے الیکٹرک کی نجکاری کیوں کی گئی تھی اس لئے کہ لوڈ شیڈنگ ختم ہو؟ یہ خود انحصار ہو جائیں، اسی لئے کے ای ایس سی کو بیچ دیا گیا تھا۔

حافظ نعیم الرحمن کا کہناتھاکہ اب کے الیکٹرک صارفین کی تعداد ساڑھے 29لاکھ ہوچکی ہے، 2005 میں صارفین کی تعداد 18 لاکھ تھی۔

انہوں نے کہا کہ حکومت اب ایک پرائیوٹ ادارے کو 95 ارب کی سبسڈی دیتی ہے، کے الیکٹرک کے والی وارث ماں باپ کا ہی نہیں پتہ کہ کون اس کا مالک ہے، کیا ملک دشمن عناصر اس کے کرتا دھرتا ہیں؟

امیرِ جماعتِ اسلامی کراچی نے کہا کہ شہری لوڈ شیڈنگ کے عذاب میں مبتلا ہیں، وفاقی حکومت اس کی سب سے بڑی ذمے دار ہے۔ان کا مزید کہنا ہے کہ 13برس سے برسرِاقتدار پاکستان پیپلز پارٹی اس مسئلے پر بولنے کو تیار نہیں۔

حافظ نعیم الرحمن کا یہ بھی کہنا ہے کہ گورنر سندھ عمران اسماعیل کے لوڈ شیڈنگ ختم کرنے کے دعوے کہاں گئے؟

Tags
Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
Close
Close