میرا کراچینمایاں

میڈیکل کالج میں جعلی داخلوں کا ریفرنس، فیصلہ 6 سال بعد آگیا

میڈیکل کالج میں جعلی داخلوں کا ریفرنس، فیصلہ 6 سال بعد آگیا

احتساب عدالت نے سندھ میڈیکل کالج کراچی میں جعلی داخلوں سے متعلق ریفرنس پر فیصلہ دیتے ہوئے 6 سال بعد سابق پرنسپل سمیت تمام 10ملزمان کو عدم شواہد کی بناء پر بری کر دیا۔

عدالت کی جانب سے بری ہونے والے ملزمان میں سابق پرنسپل ، ڈاکٹر شمشیر، عبدالہادی صدیقی، پروفیسر سید نصیر الدین، اعجاز احمد صدیقی، علیم الدین، وکیل خان شامل ہیں۔

کیس کے دوران ٹرائل 3 ملزمان بشیر میمن، انکسار الحق اور جمیل اصغر انتقال کرچکے ہیں۔

نیب کاکہنا ہے کہ ملزمان پرسندھ میڈیکل کالج کراچی میں جعلی داخلے دینے کا الزام تھا،معاملےکی شکایت اس وقت کے گورنر سندھ کی جانب سے ارسال کی گئی تھی۔

نیب ریفرنس کے مطابق جعلی داخلے 2000 سے 2001 کے درمیان کیے گئے تھے، جس میں فی طالب علم پانچ سےسات لاکھ روپےرشوت وصول کی گئی تھی۔

Tags
Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
Close
Close