ادھر اُدھر کینمایاں

تمام شہریوں کو ویکسین لگنے تک پابندیاں ختم نہیں ہوسکتیں

معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل کا کہنا ہے کہ ویکسین لگوانے سے 2 سال میں موت واقع ہونے کی خبریں جھوٹی ہیں۔ ایسی باتوں میں کوئی صداقت نہیں۔

اپنے نئے ویڈیو پیغام میں وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان نے تمام شہریوں کو ویکسین لگنے تک پابندیاں نہ ختم ہونے کا عندیہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ تمام شہریوں کو ویکسین لگنے تک پابندیاں ختم نہیں ہوسکتیں۔ کچھ علاقوں میں مثبت کیسز کی شرح 4 فیصد سے نیچے آچکی ہے۔ کرونا کی تیسری لہر نیچے چلی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ویکسین لگوانے سے 2 سال میں موت ہونے کی بات غلط ہے۔ ڈبلیو ایچ او کی منظور شدہ ہر ویکسین کا پہلے ٹرائل اور ٹیسٹ کیا گیا۔ فائزر حج، ورک یا تعلیم کیلئے باہر جانیوالوں کو لگائی جائے گی۔ فائزر ویکسین کی ایک لاکھ خوراکیں پاکستان پہنچ گئی ہیں۔

سندھ میں کرونا وائرس کی تیسری لہر اور کیسز میں اضافے سے متعلق انہوں نے بتایا کہ سندھ میں شرح اب بھی 6 سے 7 فیصد کے درمیان ہے۔ سندھ میں تیسری لہر کا آغاز تاخیر سے ہوا تھا۔

عالمی وبا سے متعلق معاون خصوصی نے کہا کہ کرونا نے تمام ممالک کے صحت کے نظام کو متاثر کیا، اس وبا کا مقابلہ کوئی ایک ملک تنہا نہیں کرسکتا، اس وبا کے خلاف پوری دنیا کو متحد ہونا ہوگا۔

واضح رہے کہ ملک بھر میں کرونا کیسز میں بتدریج کمی واقع ہورہی ہے۔ 2 ماہ بعد فعال کیسز کی تعداد 50 ہزار سے کم ہوگئی ہے، جب کہ مثبت کیسز کی شرح بھی 4 فیصد سے کم ہے۔ اس سے قبل 29 مارچ کو ملک میں کرونا کے فعال کیسز کی تعداد 48 ہزار 566 تھی جو 30 مارچ کو 50 ہزار سے تجاوز

Tags
Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
Close
Close