شہرِ قائد کراچی آج بھی گرم اور مرطوب موسم کی لپیٹ میں        کراچی سے لاپتہ ہونیوالی تیسری لڑکی نے بھی نکاح کرلیا        گڈاپ میں سرکاری زمینوں پر قبضہ، غیرقانونی گوٹھ بنانے کا انکشاف        وفاقی حکومت کابینہ کی تشکیل کے بعد گورنرز کی تعیناتی کے لیے متحرک ہوگئی        نیپرا نے بجلی کی قیمتوں میں اضافےکا نو ٹی فکیشن جاری کردیا    

سندھ ہائیکورٹ کا سکھرحیدرآباد موٹروے نہ بننے پراین ایچ اے حکام سے وضاحت طلب

Spread the love
سندھ ہائیکورٹ سکھربینچ نے سکھرحیدرآباد موٹروے نہ بننے پراین ایچ اے حکام سے وضاحت طلب کرلی ہے۔ سکھر حیدر آباد موٹر وے نہ بننے کے خلاف وکیل خان محمد سانگی کی جانب سے سندھ ہائی کورٹ سکھر بینچ میں دائر پٹیشن پر سماعت ہوئی۔ جسٹس محمد ارشد خان اور جسٹس امجد علی سہتو پر مشتمل دو رکنی بینچ نے سماعت کی۔ عدالت کی جانب سے جامشورو روڈ پر حادثات پیش آنے پرمتعلقہ این ایچ اے افسران کی سرزنش کی گئی۔ جسٹس امجد علی سہتو نے این ایچ اے افسران سے استفسار کرتے ہوئے کہا کہ کچھ دن پہلے 15 افراد حادثے کا شکار ہوئےتھے،اس کا ذمہ دار کون ہے؟ ان لوگوں کے مرنے کا ذمہ دار چیئر مین این ایچ اے یا سیکریٹری کمیونیکیشن کو قرار دیا جائے۔ جسٹس امجد علی سہتو نے مزید ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ جامشورو اور سیہون روڈ کیوں نہیں مکمل ہورہا ہے اور کتنے لوگوں کے مرنے کا انتظار کررہے ہو؟۔ جسٹس امجدعلی سہتو نے مزید کہا کہ 15 افراد کے مرنے سے پورے پورے خاندان تباہ ہوگئے، کیا اب لوگوں کی لاشوں پر سڑک بناؤ گے؟ اس روڈ پر روزانہ دو، دو حادثات ہورہے ہیں جس میں انسانی جانیں ضائع ہورہی ہیں، سندھ کا کوئی والی وارث نہیں اورعوام کو کوئی سہولت نہیں دی جارہی ہے۔ جسٹس امجد علی سہتو نے یہ بھی ریمارکس دئیے کہ سندھ میں سڑکیں تباہ جب کہ اسپتال اوراسکول ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں۔ عدالت نے کیس کی سماعت 28 جون تک ملتوی کرتے ہوئے این ایچ اے حکام سے وضاحت طلب کرلی۔

Leave a comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *


ISLAM



TAGS