کالمز/بلاگز

سرمنڈاتے ہی اولے پڑے

تحریر:سمیرقریشی

سندھ کا ضلع خیرپورمیرس جہاں دوسیاسی وثقافتی خاندانوں کی اجارہ داری ہے۔۔ان ہی کی مرضی سے ڈپٹی کمشنراورایس ایس پیزکی تقرریاں ہوتی ہیں۔۔ماضی میں اسی ضلع سے وزیراعلیٰ سندھ بھی رہے اورآج بھی صوبائی وزرااس ضلع سے سندھ کی نمائندگی کرتے ہیں ۔۔اسی ایک خاندان کی سفارش پرحال ہی میں ایس ایس پی خیرپورعمرطفیل کا تبادلہ کرکے امیرسعود مگسی کو ایس ایس پی خیرپورمقررکیاگیاہے ۔۔جرائم کے حوالے سے ضلع خیرپوراہم سمجھاجاتاہے جہاں اغواکی وارداتیں اوردیگرجرائم عروج پرتھے لیکن کچھ سال قبل جب ناصرآفتاب جوکہ اب ڈی آئی جی ٹریننگ ہیں وہ ایس ایس پی خیرپورتھے توانہوں نے وہ ڈنڈااٹھایاتھاکہ اغواکی وارداتیں نہ ہونے کے برابررہ گئی تھیں لیکن آج پھردن دہاڑے اتنے سالوں بعدبنڈوفیض محمدکے علاقہ میں محمدخان اوڈھوکے آم کے باغ سے مسلح اغواکاردن دہاڑے 7افراد کو اغواکرکے لے گئے ۔۔ایس ایچ اوبنڈوفیض محمدغلام قادرچانڈیوکے مطابق ڈاکوناریجونے اپنے ساتھیوں سمیت انہیں اغواکیاہے ،،،،یہ بات روزروشن کی طرح عیاں ہے کہ اس ضلع میں باہرسے آنے والاکوئی بھی گروہ واردات نہیں کرتااورجوبھی کرتاہے پولیس اس کے بارے میں مکمل سن گن اورمعلومات رکھتی ہے،،،،،جب سے کیپٹن سعود مگسی آئے ہیں یہ اغواکی واردات یقیناان کے لیے ایک بڑاجھٹکاہوگی لیکن دیگرجرائم کی بات کی جائے تورانی پورسے 9موٹرسائیکلیں اب تک جاچکی ہیں،،،،خیرپورسٹی اے سیکشن میں دوبڑے ڈاکے لگ چکے ہیں ۔۔گمبٹ میں کاروباری شخصیت اجے کمارلٹ چکے ہیں اورصابرپھل کے گھرمیں بھی ڈاکہ لگ چکاہے ۔۔اب تک ایس ایس پی کو دوہفتہ بھی مکمل نہیں ہوئے کہ تین کروڑ سے زائد کی وارداتیں ہوچکی ہیں ۔۔اس ضلع کا ایس ایس پی توتبدیل ہوگیالیکن ایس ایس پی کو چلانے والے سالوں سے تعینات ہیں جن کی ہرالٹی سیدھی خبرپرایس ایس پی کو یقین کرناپڑے گاکیونکہ انہی سے ایس ایس پی بریفنگ لےتے ہوں گے۔۔ان میں پندرہ سال سے ریڈرکی سیٹ پرتعینات شاہدشیخ۔۔13سال سے تعینات ڈی آئی بی انچارج علی گل میرانی اور18سال سے تعینات سی آئی اے انچارج میرامداد تالپورشامل ہیں ۔۔یہ ایسے چیمپئین افسران ہے کہ نہ ان پرتین سالہ روٹیشن پالیسی لاگوہوتی ہے اورنہ ہی پولیس رول تعینات ہوتاہے جبکہ تینوں کا یہ ہوم ڈسٹرکٹ ہے دوسری جانب آئی جی سندھ مشتاق مہرکے واضح احکامات ہیں کہ سی آئی اے انچارج ڈی ایس پی رینک کا افسرلگے گالیکن شایدانسپکٹرمیرامدادایس ایس پیزکو زیادہ ہی پیاراہے۔۔موجودہ ایس ایس پی کیپٹن سعود مگسی ایک اچھے افسرہیں اورجہاندیدہ اوردوررس سوچ کے مالک ہیں لیکن اس دورانیے میں ہونے والی وارداتوں کے پیش نظران کے پاس دوہی راستے بچے ہیں یاتووہ پرانے گھوڑوں کو اسی لگام کے ساتھ استعمال کریں یانئے شہسواروں کو میدان میں لائیں ۔۔۔یقیناخیرپورسعودمگسی کے لیے ایک بڑاچیلینج ہے ورنہ جواصل جو ڈسٹرکٹ چلانے والے پولیس افسران ہیں ان کا ذکرہم اوپرکرچکے ہیں ۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close