ادھر اُدھر کی

سندھ بھرمیں اسکول بند ہونے سےاساتذہ بےروزگار

سندھ بھرمیں اسکول بند ہونے سےاساتذہ بےروزگار

کرونا کےبعد سندھ بھر کےتعلیمی ادارہ مارچ سے ستمبر کے وسط تک بند رہے۔سال کے 365 دنوں میں سے صرف 65 دن بچے اسکول گئے۔

لاک ڈاؤن کے بعد پرائیوٹ اسکولز میں 25 سے 30 فیصد بچے اسکولوں میں واپس ہی نہیں آئے۔سندھ میں 500 پرائیویٹ اسکول مکمل طور پر بند ہونے سے1لاکھ سے زائد اساتذہ بےروزگار ہوگئے۔

کرونا کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے آن لائن کلاسز کا سلسلہ شروع کیا گیا تاہم 95 فیصد والدین اور90فیصد تعلیمی ادارے آن لائن کی سہولیات سے ہی محروم ہیں۔

میٹرک اورانٹر کی پروموشن پالیسی کے بعد پرائیوٹ اسکولز اور کالجز میں داخلوں کا معیار بالکل گرگیا اورکراچی یونیورسٹی میں ہونے والے داخلہ ٹیسٹ میں 71 فیصد بچے فیل ہوئے تاہم جامعہ کراچی کونتائج  کے بعد داخلہ ٹیسٹ منسوخ کرنے پڑے اور اوپن میرٹ پرداخلے لینے کا فیصلہ کیا گیا۔

Tags
Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
Close
Close