ملٹی میڈیا

منگھو پیر،عدالتی حکم نظرانداز واٹر بورڈ کی اراضی پر قبضہ جاری

کراچی (نوراسلام  سے)منگھوپیر قبضہ مافیاں بے لگام واٹر بورڈ کی زمین پرپنجے گاڑھ دیٸے پولیس سرکاری زمینوں پر قبضہ روکنے میں مکمل ناکام چند ماہ میں سینکڑوں مکانات تعمیر رہاٸش شروع.واٹر بورڈ کی منگھوپیر میں سینکڑوں ایکڑ اراضی پر قبضہ جعلی گوٹھ آباد ہوگٸے. عدالتی حکم پر واٹر فلٹر پلانٹ کے پہاڑ پر تعمیرات بالخصوص رہاٸشی آبادی قاٸم کرنے پر پابندی کے باوجود ادارے خاموش قبضہ مافیاں نے سرکاری زمین پر پلاٹنگ شروع کردی

سستے داموں پلاٹ فروخت کرنے کا عمل بدستور جاری . سرکاری زمین اور واٹر فلٹر پلانٹ کے پہاڑ پر بلا خوف و خطر مکانات تعمیر کیٸے جارہے ہیں جبکہ محکمہ واٹر بورڈ محکمہ معدنیات اور پولیس کی پرسرار خاموشی. مقامی افراد کے مطابق قبضہ مافیاں کیخلاف کارواٸی نہ ہونے کی وجہ سے قبضہ مافیاں مضبوط ہوتے جارہے ہیں اور جب سادہ لوں افراد پلاٹ خرید کر مکانات تعمیر کر لے گے تب سرکار کو ہوش آٸے گا جب تک یا بہت دیر ہوچکی ہوگی یا پھر تمام تر نقصان غریب کا ہوگا سرکار بروقت کارواٸی کرے تو قبضہ مافیاں کو لگام ڈالی جاسکتی ہے ساتھ ہی بڑے نقصان سے بچا جاسکتا ہے. یاد رہےعدالتی حکم پر سابقہ ڈی آٸی جی ویسٹ ذولفقار لاڑک سابقہ ایس ایس پی ویسٹ ناصر آفتاب سابقہ ایس پی اورنگی حسن سردار نیازی نے مذکورہ علاقے کا دورہ کرکے قبضہ روکھنے کے لیٸے پولیس چیک پوسٹ قاٸم کرنے کے احکامات جاری کیٸے تھے جو کچھ ماہ بعد ختم کردی گٸی
پولیس چیک پوسٹ قاٸم کرنے کا مقصد واٹر فلٹر پلانٹ کے اردگرد کے اراضی کو محفوظ بنانا تھا محکمہ واٹر بورڈ کے واٹر فلٹر پلانٹ کے قریب کٹاٸی اور مکانات کی تعمیر سے فلٹر پلانٹ کو نقصان پہنچنے کا اندیشہ ہے ساتھ ہی لینڈ سلاٸیڈنگ کی صورت میں قیمتی جانوں کے ضیاع کابھی خطرہ ہے.

Tags
Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close